Android AppiOS App

اہم ترین حکومتی شخصیت مستعفیٰ۔۔۔ تحریک انصاف کو بڑا دھچکا لگ گیا

  پیر‬‮ 19 اپریل‬‮ 2021  |  14:29

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کے مشیر ضیاء اللہ بنگش اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق ضیااللہ بنگش نے استعفیٰ وزیراعلیٰ محمود خان کو بھجوا دیا۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک بیان میں انہوں نے بتایا کہ میں بطور وزیراعلٰی خیبرپختونخوا کے مشیر اپنے عہدے سے مستعفی ہوتا ہوں کیوں کہ میرے اوپر حلقے کی ذمہ داریاں بہت ہیں اور میں اپنے حلقے پر ذیادہ توجہ دینا چاہتا ہوں ، اس لیے

وزیراعلٰی خیبرپختونخوا محمود خان کو اپنا استعفی پیش کر دیا ہے۔خیال رہے کہ چند روز قبل ہی حکومت نے خیبر پختونخوا کابینہ میں بڑے پیمانہ پر رد و بدل اور توسیع کی گئی ہے ، صوبائی کابینہ میں 4 مزید وزراء کو شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور

نئے وزرا نے منگل کو اپنے وزارتوں کا حلف بھی اٹھالیا، جب کہ بہتر کارکردگی نہ دینے والے وزراء سے وزارت واپس لے لی جائے گی، وزیراعلیٰ محمود خان نے خیبر پختونخوا کابینہ کے وزراء کے قلمدان تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ، جس کے بعد صوبائی کابینہ میں 4 نئے وزراء میں عاطف خان اور شکیل خان کو بھی دوبارہ شامل کیا گیا ہے ، جب کہ فضل شکور اور وفاقی وزیر امین اللہ گنڈا پور کے بھائی فیصل امین گنڈا پور کو بھی بطور وزیر صوبائی کابینہ میں شامل کیا گیا۔دوسری طرف وفاقی حکومت نے بھی کابینہ میں رد و بدل کرتے ہوئے شوکت ترین کو وزارت خزانہ و ریونیو کا قلمدان سونپ دیا ، حماد اظہر کو وفاقی وزیر برائے توانائی بنادیا گیا ہے جب کہ عمر ایوب خان سے توانائی کی وزارت کا قلمدان واپس لے کر انہیں وزیر برائے اقتصادی امور تعینات کیا گیا ہے ، بتایا گیا ہے کہ سینیٹر شبلی فراز سے اطلاعات کی وزارت واپس لے کر انہیں وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کا قلمدان سونپا گیا ہے ، اس کے علاوہ خسرو بختیار کو وزیر صنعت و پیداوار کی ذمہ داریاں دی گئی ہیں اور فواد چوہدری کو باقاعدہ طور پر وزرارت اطلاعات سونپ دی گئی۔ وزارت خزانہ و ریونیو کا قلمدان سونپ دیا ، حماد اظہر کو وفاقی وزیر برائے توانائی بنادیا گیا ہے جب کہ عمر ایوب خان سے توانائی کی وزارت کا قلمدان واپس لے کر انہیں وزیر برائے اقتصادی امور تعینات کیا گیا ہے ، بتایا گیا ہے کہ سینیٹر شبلی فراز سے اطلاعات کی وزارت واپس لے کر انہیں وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کا قلمدان سونپا گیا

ہے ، اس کے علاوہ خسرو بختیار کو وزیر صنعت و پیداوار کی ذمہ داریاں دی گئی ہیں اور فواد چوہدری کو باقاعدہ طور پر وزرارت اطلاعات سونپ دی گئی۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎