Android AppiOS App

ویا گرہ سے دس گنا طاقت ور طب نبوی میں تر بوز کے بیج کے وہ فائدے جو 40 سال کے بوڑھے کو بھی جوان بنا دے

  جمعرات‬‮ 18 فروری‬‮ 2021  |  15:21

آج جس پھل کا ذکر کرنے جارہا ہوں اس کانام ہے تربوز ۔ تر بو ز کے متعلق میرے پیارے نبی کریمﷺ کی حدیث ہے کہ تربو ز کھایا کرو۔ اس کی سردی کو ختم کرنے کےلیے اس کے ساتھ کھجور بھی کھا لیا کرو۔ اس حدیث سے آپ لوگوں کو پتہ لگ جاتا ہےکہ تربوز کی کیا اہمیت ہے۔ تربو ز جسم کے اندر سے فالتو گرمی اور اس کے ساتھ ساتھ جسم کے فاسد مادوں اور جگر کے تمام امراض کو فعال کرتا ہے۔ اس حدیث کے ہمارے طب نبو ی ؐ کے اس فارمولے کی تصدیق انڈین سائنس دان اسی حدیث کو اپنی بیس بنا کر انہوں نے ایسے ایسے تحقیق مقالے شائع کیے ہیں۔

دنیا تربو ز کے فوائد سن کر دھنگ رہ

گئے۔ انگریز بھی حتیٰ کہ یہ کہنے پر مجبور ہوگئے ہیں کہ گاگرہ کے اندر اجزاء وہی تربوز کے اندر پائے جاتے ہیں۔ لیکن ہم اس سے فائد ے کیوں نہیں حاصل کرپاتے ۔ یعنی ہماری مردانہ طاقت میں یا جسمانی طاقت میں اضافہ کیوں نہیں ہوپاتا۔ تربوز کو کس وقت کھانا چاہیے ہم لوگوں کو پتہ نہیں ہے۔ اورہمیں کھانا کتنا چاہیے ہمیں یہ بھی پتہ نہیں ہے۔ تربوز کو کھانے کا سب سے بہترین وقت یا تربوز کس وقت کھانا چاہیے ۔ سب سے پہلے مزاج کا حامل پھل ہے اس کا مزاج سرد ہے۔ اس کے کھانے سے جگر کے فاسد مادے کی صفائی ہوتی ہے۔ یہ صبح نہارمنہ کھانا بہتر ہے۔ لیکن جب آپ اس کو کھائیں اس پر تھوڑی سی کالی مرچ یا کالانمک چھڑک لینا ہے۔ تاکہ اس تربوز کا بھاری پن ختم ہوجائے۔ ہم عموماً کیا غلطی کرتے ہیں۔

تربوز کو ویسے پکڑا کسی بھی وقت کھالیا۔ رات کو کھالیا۔ دوپہر کو کھا لیا۔ یا مطلب کھانے کے فوراً بعد کھالیا ۔ کھانے کے فوراً بعد تربوز بالکل نہیں کھانا چاہیے۔ کیونکہ یہ تھوڑا ساحاوی ہوتاہے اور ہضم دیرہوتاہے۔ اور اس کے فعال بھی سرد ہیں۔ جب آپ کھانا کھاتے ہیں تو آپ کا معدہ گرمی میں آجاتاہے۔ اوپر سے تربو ز کھا کر معدہ سردی اور گرمی کا شکا رہو کر اس کے فعال سست پڑجائیں گے۔ اوراس سے آپ کو ہیضہ ہونے کا خطرہ ہے۔ آپ نے تربوز کو صبح اٹھ کر خالی پیٹ کھانا چاہیے اور اس کےاوپر کالی مرچ یا نمک چھڑک کر کھانا چاہیے تاکہ اس کا بھاری پن ختم ہوجائے اور جلدی ہضم ہوجائے۔

طب

میں یا طب نبوی ؐ میں جو جگر کو سب سے زیادہ خون میسر کرنے والا جو شربت ہے وہ شربت فولاد ہے۔ یہ بھی سن لیں کہ جو شربت فولاد تیا ر ہوتاہے۔ وہ تربوز فولاد کے اندر رکھ کر ، تربوز اور فولاد کا جو پانی نکلتاہے۔ جو فولاد ہے اس سے تیار ہوتاہے۔ اس سے تربوز کی اہمیت کا اندازہ لگالیں۔ کہ اس کی کتنی اہمیت ہے۔تربوز جگر کے فعال ٹھیک کرتا ہے جو جگر کے انزائمز نکلتے ہیں۔ جو مردانہ عضو کو بلڈ کی سرکولیشن کرتے ہیں۔ وہ بلڈ تیزی سے پینس کو بہال کرتے ہیں۔ اس وجہ سے جو مرد کی مردانہ طاقت ہے۔ وہ ایسے ہی اثر کرے گی جیسے ویاگرہ کرتی ہے۔ لوگ کہتے ہیں ہم بالکل ایسے کھارہے ہیں۔ لیکن کوئی فرق نہیں پڑتا مردانہ طاقت میں۔ وہ یہ وجہ ہے کہ تر بوز کو ایک وقت میں دو یاڈھائی گرام سے زیادہ نہیں کھانا چاہیے۔ ہم کلو یا آدھا کلو کھاجاتے ہیں وہ فائدے دینے کے بجائے الٹانقصان دیتے ہیں۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎