Android AppiOS App

پیسہ پھینک تماشہ دیکھ! متعدد اراکین نے 2،2 جگہ سے پیسے پکڑ لیے، یوسف رضا گیلانی کو اپوزیشن نے متفقہ طور پر امیدوار کیوں نامزد کیا؟ وجہ سامنے آگئی

  منگل‬‮ 16 فروری‬‮ 2021  |  14:34

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے سینیٹ الیکشن سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ سینیٹ کے الیکشن میں ٹکٹوں کی تقسیم ہو رہی ہے۔ دال جوتیوں میں نہیں بٹ رہی ، زمین سے اکٹھی ہو رہی ہے۔ خرید و فروخت کا بازار گرم ہو چکا ہے ۔ جانوروں کی پھر کوئی عزت ہوتی ہے کیونکہ وہ ایک مالک کے پاس بک جاتے ہیں تو دوسرے مالک کے پاس نہیں جاتے ۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ اراکین اسمبلی سینیٹ الیکشن کے لیے دو دو جگہوں سے پیسے پکڑ رہے ہیں، مجھے لگتا ہے کہ اس میں اسلام آباد بہت بعد میں آتا ہے ، ادھر فضا ہی کچھ ارو ہے کیونکہ اسلام آباد

اور پنڈی جانے والے راستوں میں ایک شارٹ کٹ راستہ ڈھونڈا جا رہا ہے اور یہی وجہ ہے کہ یوسف رضا گیلانی کو سینیٹ کا اُمیدوار بنایا گیا ہے۔

یوسف رضا گیلانی نے اپنے دور میں ایک آئل ریفائنری لگانے والے سے بیس کروڑ روپیہ نذرانے کے طور پر لیا ہے۔انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ جو کام اس مرتبہ بکرا منڈی میں مندا رہا تھا سینیٹ الیکشن میں اس مرتبہ کامیاب بیوپاری انشاء اللہ اچھا پیسہ کما لیں گے۔

عارف حمید بھٹی نے کہا کہ جب ایک ایم پی اے منتخب ہوتا ہے تو وہ بھی پیسہ لگا کر ووٹ خریدتا ہے ، دفتر بنانے کا ایک لاکھ روپیہ دیتا ہے اور دس ہزار روپے چائے پانی کا خرچہ دیتا ہے اور دو سو دفاتر بناتا ہے۔

ادھر پارٹیوں میں بھی تو من پسند افراد کو ٹکٹس دئے گئے ہیں۔ عارف حمید بھٹی نے کہا کہ راجہ ظفر الحق وضع دار آدمی ہیں اور چند صاف ستھرے افراد میں ہیں ، وہ کسی کو بُرا بھلا نہی کہتے ، کسی کو گالی نہیں دیتے ، اصولوں کی سیاست کرتے ہیں لیکن مسلم لیگ ن نے مشاہد اللہ کو ٹکٹ دیا وہ تو نواز شریف کی حمایت میں آخری حد بھی کراس کر جاتے ہیں۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎