Android AppiOS App

اس دن نے میری زندگی کارخ موڑ دیا،خو د سے 11سال چھوٹے نک جونس سے شادی کرنیوالی پریانکاکیساتھ 17برس کی عمرمیں کیاہوا؟

  بدھ‬‮ 10 فروری‬‮ 2021  |  13:22

سابق مس ورلڈ اور بھارتی اداکارہ پریانکا چوپڑا کی سوانح عمری ’ان فنشڈ‘ فروخت کے لیے پیش کردی گئی۔پریانکا چوپڑا گزشتہ 5 سال سے ’ان فنشڈ‘ پر کام کر رہی تھیں اور گزشتہ برس اکتوبر کے آخر میں اداکارہ نے بتایا تھا کہ انہوں نے کتاب لکھنے کا کام مکمل کرلیا۔اداکارہ نے اپنی انسٹاگرام پوسٹ میں بتایا تھا کہ انہوں نے سوانح عمری مکمل کرلی ہے اور

اسے پڑھنے کے خواہش مند قبل از وقت اس کا آرڈر دے سکتے ہیں۔خبریں تھیں کہ پریانکا چوپڑا کی سوانح عمری جنوری 2021 میں شائع ہوگی تاہم بعد ازاں اسے 9 فروری کو فروخت کے لیے پیش کرنے کا اعلان کیا گیا تھا اور اب اسے فروخت کے لیے پیش کردیا گیا۔پریانکا چوپڑا کی سوانح عمری پر متعدد ویب سائٹس

اور نشریاتی اداروں نے ابتدائی تبصرے شائع کیے ہیں، جن کے مطابق اداکارہ نے ’ان فنشڈ‘ میں ذاتی زندگی کے تمام واقعات، حالات اور رازوں کو شائقین کے سامنے بہادری سے بیان کیا ہے۔خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) نے ’ان فنشڈ‘ کے تبصرے میں بتایا کہ پریانکا چوپڑا نے اپنی سوانح عمری میں بچپن سے لے کر معروف شخصیت بن جانے اور ایشیا چھوڑ کر امریکا منتقل ہونے کے واقعات کو بیان کیا ہے۔اداکارہ نے بہادری سے دو براعظموں میں گزاری گئی زندگی کو احسن انداز میں بیان کیا ہے اور بتایا ہے کہ انہیں کس طرح ایشیائی ہونے کی وجہ سے امریکا میں نسلی و جنسی تعصب کا سامنا کرنا پڑا۔تبصرے کے مطابق پریانکا چوپڑا نے کتاب میں

والد کے انتقال کے بعد ذہنی اضطراب میں مبتلا ہوجانے کا بھی اعتراف کیا ہے اور ساتھ ہی یہ بھی بتایا ہے کہ اگر ان کے والدین انہیں خودمختاری نہ دیتے تو وہ آج مشہور شخصیت نہ ہوتیں۔پریانکا چوپڑا نے کتاب میں بتایا کہ بچپن میں انہیں عالمی سطح کا انجنیئر بننے کا شوق تھا تاہم ساتھ ہی انہیں انسانیت کی فلاح و بہبود کے کاموں میں بھی دلچسپی تھی مگر ایک فیصلے نے ان کی زندگی تبدیل کردی۔اداکارہ نے بتایا کہ جب وہ 17 برس کی ہوئیں تو بھائی نے انہیں مشورہ دیا کہ وہ بھارت میں ہونے والے مقابلہ حسن میں حصہ لیں اور یوں ان کی خوبصورتی نے ان کی زندگی کا رخ موڑ دیا۔سوانح عمری میں اداکارہ نے لکھا کہ سال 2000 میں مس ورلڈ بننے اور عالمی مقابلہ حسن میں بھارت کی نمائندگی کرنا ان کے لیے اعزاز کی بات تھی اور

یہیں سے ان کی زندگی کا نیا دور شروع ہوا۔کتاب میں اداکارہ نے اس بات کا اعتراف بھی کیا ہے کہ نوعمری میں وہ خوبصورتی بڑھانے کے لیے فیئرنیس کریموں سمیت دیگر طریقوں کو بھی آزماتی رہیں۔پریانکا چوپڑا نے اپنی سوانح عمری میں اپنی گہری رنگت اور ایشیائی ہونے کی وجہ سے امریکا میں پیش آنے والی مشکلات کا بھی ذکر کیا ہے اور

بتایا ہے کہ جب انہیں پہلی بار امریکا میں شوبز منصوبے ملے تو انہیں نسلی تعصب کا نشانہ بنایا گیا۔’ان فنشڈ‘ میں پریانکا چوپڑا نے امریکی گلوکار نک جونس سے محبت استوار ہونے اور شادی سے متعلق بھی کہانی بیان کی ہے۔پریانکا چوپڑا کی سوانح عمری کے حوالے سے ’یو ایس ٹوڈے‘ نے بتایا کہ پریانکا چوپڑا نے کتاب میں اعتراف کیا ہے کہ ان کی دوستی جب امریکی مڈویسٹ خطے (مڈویسٹ خطہ ریاست الینوائے، انڈیانا، مینیسوٹا، میسوری، شمالی و جنوبی ڈکوٹا سمیت 12 ریاستوں پر مشتمل ہے) کی مقابلہ حسن جیتنے والی لڑکیوں سے ہوئی تو انہیں گہری رنگت کو سمجھنے میں آسانی ملی۔اداکارہ نے لکھا کہ مڈویسٹ کی مقابلہ حسن جیتنے والی لڑکیاں انہی کی طرح گہری رنگت کی تھیں اور انہیں دیکھنے کے بعد ہی ان کے حوصلے بلند ہوئے۔سوانح عمری میں اداکارہ نے یہ انکشافات بھی کیے ہیں کہ انہیں ان کے ہندو عقائد کی وجہ سے بھی مشکوک نظروں سے دیکھا جاتا اور ان کا ذکر ہندو دہشت گرد کے طور پر کیا جاتا۔خیال رہے کہ پریانکا چوپڑا کامیاب اداکارہ ہونے کے ساتھ ساتھ گلوکارہ اور فلم پروڈیوسر بھی ہیں۔انہوں نے شوبز میں اپنے کیریئر کا آغاز سال 2000 میں مس ورلڈ کا اعزاز جیت کر کیا، اس وقت وہ صرف 18 سال کی تھیں۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎