Android AppiOS App

انا للہ وانا الیہ راجعون! پاکستان ایک بہت بڑی شخصیت سے محروم ہوگیا

  پیر‬‮ 8 فروری‬‮ 2021  |  12:52

امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاریؒ کے فرزند ،ممتاز عالم دین اور مجلس احرار اسلام پاکستان کے سربراہ مولانا سید عطاء المہیمن شاہ بخاری 77 سال کی عمر میں انتقال کر گئے، ان کی نماز جنازہ اتوار سات فروری کے روز قلعہ کہنہ قاسم باغ سٹیڈیم ملتان میں صبح گیارہ بجے ادا کی جائے گی ،سید عطاء المہیمن شاہ بخاری

نے اپنی ساری زندگی عقیدہ ختم نبوت ﷺ،تحفظ ناموسِ صحابہ اور اسلام کی سربلندی کے لئے وقف رکھی ،جرات مندی اور بہادری میں اپنی مثال آپ سید عطاء المہیمن شاہ بخاری اسلاف کی نشانی سمجھے جاتے تھے اور پوری دنیا میں ان کے لاکھوں چاہنے والے ہیں تاہم انہوں نے اتنی سادہ زندگی بسر کی کہ آج کے ترقی یافتہ دور میں کوئی تصور بھی نہیں

کر سکتا ۔ تفصیلات کے مطابق برصغیر کی عظیم دینی تحریک مجلس احرار اسلام کے سربراہ اور امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاریؒ کےآخری فرزند ،مولانا سید عطاء المہیمن شاہ بخاری گزشتہ کچھ عرصہ سے علیل تھے ،ان کی وفات کی خبر سے پاکستان سمیت دنیا بھر کے دینی حلقوں میں انتہائی رنج و غم پھیل گیا ہے۔مولانا سید عطاء المہیمن شاہ بخاری اپنی جوانی سے لیکر آخری سانس تک عقیدہ تحفظ ختم نبوتﷺ کے لئے برسرپیکار رہے،دنیاوی شہرت اور لالچ سے کوسوں دور مولانا سید عطاء المہیمن شاہ بخاری نے اپنی ساری زندگی انتہائی سادہ اور حقیقی درویشانہ طرزِ عمل اختیار کئے رکھا ،وہ حقیقی معنوں میں اسلاف کی نشانی تھے،علم و عمل کی چلتی پھرتی نشانی مولانا سید عطاء المہیمن شاہ بخاری کو دینی حلقوں میں ممتاز مقام حاصل تھا اوربڑی بڑی مذہبی جماعتوں کے قائدین اُن سے ملنا اپنی سعادت سمجتے تھے ۔قائد احرار

اور “پیر جی ” کے نام سے مشہور مولانا سید عطاء المہیمن شاہ بخاری مال و دولت جمع کرنے اور بڑی بڑی گاڑیوں میں جتھوں کے ہمراہ سفر کرنے کی علتوں سے ہمیشہ دور رہے ۔ امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاریؒ کے فرزند ہونے کا “گھمنڈ “بھی کبھی ان کے نزدیک پھڑک نہیں سکا ،اُنہوں نے اپنی ساری زندگی دین اسلام کی سربلندی میں بسر کی ،دینی جماعتوں کے قائدین ،وفاق المدارس کے ذمہ داران اور علماء مشائخ نے سید عطاء المہیمن شاہ بخاری کے انتقال پر گہرے دکھ اور غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ قائد احرار کے انتقال سے عالم اسلام ایک عظیم دینی بزرگ سے محروم ہو گیا ہے ،سید عطاء المہیمن شاہ بخاری

نے ساری زندگی مغربیت کو قبول نہیں کیا، ہمیشہ اتحاد امت کے لئے فکر مند رہے،وہ بلند پایہ عالم دین‘ محقق اور تمام مکاتب فکر کے اتحاد کے داعی تھے، انہوں نے تحریک ختم نبوت1974ء، تحریک ختم نبوت1984 ء، 1977ء کی تحریک نظام مصطفیٰﷺ سمیت تمام دینی تحریکوں میں بھرپور کردار ادا کیا۔اُنہوں نے نے ناموسِ رسالتﷺ کے تحفظ اور فتنہ قادیانیت کے تدارک کیلئے بے پناہ خدمات انجام دیں ۔ سربراہ مجلس احرار اسلام سید عطاء المہیمن بخاری کی نماز جنازہ کل مورخہ سات فروری بروز اتوار بوقت 11 بجے دن قلعہ کہنہ قاسم باغ سٹیڈیم ملتان میں ادا کی جائے گی۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎