Android AppiOS App

اسٹیبلشمنٹ نے کام دکھا دیا مولانا فضل الرحمان بارے بڑی خبر

  بدھ‬‮ 3 فروری‬‮ 2021  |  14:50

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر صحافی و تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے مولانا فضل الرحمان کے لہجے میں اچانک آنے والی تبدیلی کی وجہ بتا دی۔ عارف حمید بھٹی نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کہتے تھے کہ میں جی ایچ کیو کے باہر دھرنا دوں گا، یہ کہا کرتے تھے کہ عمران خان میری تم سے

لڑائی نہیں ہے ، تم تو حکومت میں ہو ہی نہیں۔جنگ دشمن سے لڑی جاتی ہے ، پاک فوج سے نہیں۔ جس الیکشن کو مولانا فضل الرحمان مانتے نہیں تھے سب پر عدم اعتماد کرتے تھے چاہے وہ عدالت ہو ، اسٹیبلشمنٹ ہو یا حکومت کو۔ اور اب کہتے ہیں کہ اسٹیبلشمنٹ سے ہمیں کوئی شکایت نہیں ہے۔ عارف حمید بھٹی نے کہا

کہ مولانا فضل الرحمان کے بھائی کو چارج شیٹ دی گئی ہے، اور کہا گیا ہے کہ مولانا صاحب آپ کے پاس اربوں روپے کی پراپرٹی ہے ہم بتائیں یا آپ بتائیں گے۔ان کو مارا نہیں گیا بلکہ گھسیٹا گیا ہے۔ جمیعت علمائے اسلام میں

اختلاف تو پہلے سے تھا ، شیرانی صاحب بھی الیکشن کمیشن میں گئے کہ یہ ف کیا ہوتا ہے۔ یہ صرف جمیعت علمائے اسلام ہے۔ انہوں نے مزید کیا کہا آپ بھی دیکھیں:عارف حمید بھٹی نے کہا کہ 31 جنوری کا دن رونے دھونے کا دن ثابت ہوا ہے۔ یہ کہتے تھے کہ سُن لو عمران خان 31 جنوری تمہارے اقتدار کا آخری دن ہے ،تمہیں چھوڑیں گے نہیں۔31 جنوری کے بعد ہم لانگ مارچ کا اعلان کریں گے ، دھرنے کا اعلان کریں گے۔ لیکن 31 جنوری چوروں کے لیے رونے کا دن ثابت ہو گیا ہے۔ 31 جنوری تو چلی گئی اور وزیراعظم عمران خان کامیاب ہو گئے کیونکہ ا نہوں نے پی ڈی ایم کو کہا تھا کہ آپ استعفے دیں میں الیکشن کرواتا ہوں۔ عارف حمید بھٹی نے کہا کہ میں نے پہلے دن ہی کہا تھا کہ پی ڈی ایم میں پیپلز پارٹی ڈیل میں ہے کچھ نہیں ہو گا۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎