Android AppiOS App

’’اور پھر چَن چڑھ گیا ‘‘ جذبات میں آکر استعفیٰ دیا ، کیا ندیم افضل چن استعفیٰ واپس لینےوالے ہیں ؟ اشارہ دیدیا گیا

  جمعرات‬‮ 14 جنوری‬‮ 2021  |  13:35

گذشتہ روز وزیراعظم کے معاون خصوصی اور تحریک انصاف کے سینئر رہنما ندیم افضل چن اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے۔اسی پر ردِعمل دیتے ہوئے وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا کہ ندیم افضل چن نے جذبات میں آکر استعفیٰ دیا۔فواد چوہدری کا کہنا ہے ندیم افضل چن بہترین سیاستدان ہیں لیکن انہوں نے جذبات میں استفعیٰ

دیا،امید ہے کہ وہ استعفی واپس لے لیں گے۔ نجی ٹی وی چینل سے گفتگو میں انہوں نے مزید کہا کہ ندیم افضل چن سیدھے سادھے انسان ہیں۔وزیراعظم کے ساتھ کام کرنے والوں کو کوئی شکوہ نہیں۔ہماری حکومت کے بہت سارے مسائل ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم نے کابینہ کو اجتماعی طور پر کہا تھا کہ جب متفقہ فیصلہ ہو جاتا ہے تو پھر تنقید نہ کیا کریں۔ دوسری

جانب ندیم افضل چن کے مستعفی ہونے کی وجوہات بھی سامنے آئی ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم کے معاون خصوصی مسلسل پارٹی پالیسی کی خلاف ورزی کرنے میں ملوث رہے، انہوں نے گزشتہ روز عمران خان کی جانب سے وارننگ دیے جانے کے بعد عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا۔ گزشتہ

روز وزیراعظم عمران خان نے وفاقی وزراء کو وارننگ دی تھی کہ اپنی کارکردگی بہتر بنائیں، جبکہ یہ پیغام بھی دیا تھا کہ جو وزیر حکومت کو خیرباد کہنا چاہے وہ جا سکتا ہے۔ وزیراعظم نے واضح کیا تھا کہ تمام وزراء کو پارٹی پالیسی کی پابندی کرنا ہوگی، جو وزیر پارٹی پالیسی کی پابندی نہیں کر سکتا، وہ کابینہ کو چھوڑ دے۔ وزیراعظم نے کہا کہ حکومتی پالیسیوں کے مطابق امور کو سرانجام دیں، حکومتی پالیسیاں عوام کے وسیع تر مفاد میں ہیں ان پر عمل کیا جائے۔ وزراء حکومتی فیصلو ں کو اونرشپ دیں، فیصلوں کی مخالفت کرنی ہے

تو بے شک مستعفی ہوجائیں، ایسی روش برقرار رکھنی ہے تو خود فیصلہ کروں گا کہ کابینہ میں رکھنا ہے یا نہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال تانیہ ادروس اور ظفر مرزا کے مستعفی ہونے کے بعد بھی خبریں سامنے آئی تھیں کہ ندیم افضل چن مستعفی ہو سکتے ہیں، تاہم وہ کئی ماہ تک کابینہ کا حصہ رہنے کے بعد اب اپنے عہدے سے مستعفی ہوئے ہیں۔ سینئر رہنما نے اپنے استعفیٰ وزیراعظم عمران خان کو بھی بھجوا دیا ہے۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎