Android AppiOS App

آصف زرداری خوف سے پریشان! سابق صدر کو عمران خان سے کیا خطرہ ہے؟ پیپلز پارٹی کی اصل پریشانی سامنے آگئی

  منگل‬‮ 5 جنوری‬‮ 2021  |  19:39

پاکستان پیپلز پارٹی کے بھی کیا کہنے، بیک وقت اپوزیشن کا حصہ بھی ہے اور حکومت کے ساتھ بھی ہے۔اس سے جتنی توقع اپوزیشن کو ہے اس سے کہیں بڑھ کر حکومت کو ہے اور یار لوگ اسے آصف زرداری کی کامیاب سیاست گردانتے ہیں۔ کبھی کبھی لگتا ہے آصف زرداری اپوزیشن کے

ہیں نہ حکومت کے بلکہ اسٹیبلشمنٹ کے آدمی ہیں۔ روزنامہ پاکستان میں حامد ولید نے اپنے کالم میں لکھا کہ گزشتہ دنوں سندھ کے سنیئر صحافی اور معروف تجزیہ کار نذیر لغاری صاحب سے بات ہوئی تو ان سے پیپلز پارٹی کی روش کا سبب پوچھا تو کہنے لگے کہ پیپلز پارٹی کو خدشہ ہے کہ اگر پاکستان تحریک انصاف کو سینٹ انتخابات میں واک اوور مل گیا تو وہ 18ویں ترمیم کو ختم

کردے گی۔ ان سے گزارش کی کہ ایک ایسی صورت حال میں جب اپوزیشن جماعتیں 450 کے لگ بھگ استعفے دے کر پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے دھرنا دیئے ہوں گی تو کیا حکومت اس پوزیشن میں ہو گی کہ 18ویں ترمیم ختم کرسکے۔ کیا آپ کو پیپلز پارٹی کے اس عذر لنگ میں کوئی جان دکھائی دیتی ہے تو کہنے لگے کہ میں آپ کے خیال سے متفق ہوں،مگر اس کے باوجود میری اطلاعات ہیں کہ پیپلز پارٹی کا خیال ہے کہ جونہی حکومت کو ایسا موقع ملے گا وہ بلاتاخیر 18ویں ترمیم ختم کرنے کا جتن کرے گی اس لئے وہ سینٹ انتخابات میں جانا چاہتی ہے۔ غالباً ایسے ہی مواقع پر کہاجاتا ہے کہ این خیال است و محال است وجنوں!

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎