Android AppiOS App

یہ سیاست ہے بھائی!ٹکٹ کے لیے اہم شخصیات کا رابطہ،عثمان بُزدار کے حوالے سے آنے والی خبر نے پاکستانیوں کو حیران کر دیا

  منگل‬‮ 29 دسمبر‬‮ 2020  |  12:38

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے بھائی کو سینیٹ الیکشن لڑانے پر غور شروع کر دیا گیا ہے۔قومی اخبار کی رپورٹ کے مطابق سینیٹ الیکشن میں تحریک انصاف پنجاب کی جانب سے ڈیرہ غازی خان سے وزیراعلیٰ پنجاب کے بھائی کا نام بھی زیر غور ہے۔سال 2021ء کے دوسرے مہینے میں سینیٹ کے متوقع

الیکشن کے اعلان کے بعد امیدواروں نے ٹکٹ کے حصول کے لیے اعلیٰ حکومتی عہدیداروں اور اہم شخصیات سے اپنے رابطوں کی مہم شروع کر دی۔ خواہشمند امیدواروں نے اپنی رابطہ مہم بھی تیز کر دی ہے۔جب کہ جنوبی پنجاب میں پاکستان تحریک انصاف کے اہم سیاسی رہنما جہانگیر ترین اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھی قریبی ساتھیوں کے بارے میں سوچ بچار شروع کر دی ہے۔ دوسری جانب بتایا گیا ہے

کہ پاکستان تحریک انصاف کا 28 نشستوں کے ساتھ ایوان بالا کی سب سے بڑی جماعت بننے کا قوی امکان ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی 19 نشستوں کے ساتھ دوسری اور مسلم لیگ ن کا 18 نشستوں کے ساتھ تیسری بڑی پارٹی کے طور پر سامنے آنے کا امکان ہے ۔ بلوچستان عوامی پارٹی کا 12 نشستوں کے ساتھ چوتھی بڑی پارٹی بننے کا امکان ہے ۔ فاٹا کی 4 نشستوں پر انتخاب نہ ہونے کے باعث ایوان بالا کی نشستیں 100 رہ جائیں گی، انتخابی عمل کے بعد حکومتی اتحاد کے پاس 49 اپوزیشن کے پاس 51 سیٹیں رہنے کا امکان ہے ۔ رپورٹ کے مطابق سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر سینیٹر راجہ ظفرالحق، سینیٹر مشاہد اﷲ خان، وزیراطلاعات سینیٹر شبلی فراز اور سینیٹر شیری رحمن سمیت 52 سینیٹرز 11 مارچ 2021ء کوریٹائرڈ

ہو جائیں گے ۔ سندھ اور پنجاب سے 11، 11 اور خیبر پختونخوا اور بلوچستان سے 12، 12 سینٹرز ریٹارئر ہو جائیں گے ۔مسلم لیگ ن کے سب سے زیادہ 17 سینٹرز ریٹائر ہوں گے ۔ اسی طرح پاکستان پیپلز پارٹی کے 7 سینیٹرز ریٹائر ہوجائیں گے ۔ایم کیو ایم کے سندھ سے 4 سینیٹرز ریٹائر ہوجائیں گے ، جمعیت علما اسلام (ف) کے 2 سینیٹرز ریٹائر ہوجائیں گے۔پاکستان تحریک انصاف کے ریٹائر ہونے والے تمام 7 سینٹرز کا تعلق خیبر پختونخواہ سے ہے۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎