Android AppiOS App

لندن میں خاص ملاقاتیں! نواز شریف نے بھی پیغام پہنچا دیا، بڑی شخصیت کے دورہِ برطانیہ کی خبر

  پیر‬‮ 28 دسمبر‬‮ 2020  |  21:15

صحافی و تجزیہ کار سلیم صافی کہتے ہیں کہ میری اطلاعات کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کے ساتھ لندن میں ایک پیغام رساں کی ملاقات ہوئی ہے جس کے بعد مسلم لیگ ن کے قائد نے لاہور جلسے میں وہ کچھ نہیں کہا جو انہوں نے گوجرانوالہ میں کیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے ایک پروگرام میں

گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان حالات میں جو کچھ بھی ہورہا ہے وہ وزیراعظم عمران خان نہیں کررہے بلکہ محمد علی درانی کی صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف کے ساتھ جیل میں ہونے والی ملاقات مقتدر حلقوں کی اجازت سے ہوئی جب کہ اس روز وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے پورا زور لگایا کہ کہ محمد

علی درانی اور شہباز شریف کی ملاقات نہ ہونے پائے۔ سلیم صافی نے کہا کہ اسی طرح سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا نام ای سی ایل سے نکلالنا عمران خان کا اپنا اقدام نہیں ہے بلکہ یہ فیصلہ بھی کہیں اور سے آنے والے دباو ے باعث کیا گیا۔ دوسری طرف مسلم لیگ فنکشنل کے رہنما محمد علی درانی نے کہا ہے کہ ٹریک ٹو ڈائیلاگ کا آغاز ہوچکا ہے ، جنہوں نے بیانات دیے ہیں وہ ٹریک ٹو ڈائیلاگ کا حصہ ہیں ، کسی بھی ڈائیلاگ کا آغاز ہمیشہ اختلاف رائے سے ہی ہوتا ہے اور یہ تمام بیانات بھی اسی ڈائیلاگ کا حصہ ہیں ، تمام فریقین کے جو بیانات آرہے ہیں وہ اسی بات کی نشاندہی کرتے ہیں کہ ٹریک ٹو ڈائیلاگ شروع ہو

چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس صورتحال میں ہر کسی کا اختلاف رائے سامنے آنا چاہئے ، اسی لیے اب سب لوگ اپنی اپنی رائے دے رہے ہیں ، اس سلسلے میں ایک صاحب کہہ رہے ہیں کہ ہم ان شرائط پر ڈائیلاگ کرسکتے ہیں ، کوئی کہہ رہا ہے ہم ڈائیلاگ کر ہی نہیں سکتے اور کسی نے کہا کہ ہم کسی کو این آر او دیے بغیر ڈائیلاگ کریں گے جب کہ ڈائیلاگ تو شروع ہوچکا ہے۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎