Android AppiOS App

تعلیمی ادارے مزیدکتنے ماہ کے لیے بندہونے والے ہیں ؟طلبہ کے لیے بڑی خبرآگئی

  پیر‬‮ 28 دسمبر‬‮ 2020  |  14:01

ملک بھر میں کورونا کی دوسری لہر نے پنجے گاڑ لیے ہیں ، کورونا کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر چئیر مین کورونا ٹاسک فورس ڈاکٹر عطاالرحمان نے تجویز پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ تعلیمی ادارے دو ماہ تک نہ کھولے جائیں ۔انہوں نے کہا ہے کہ کورونا وائرس ہر ہفتے اپنی شکل تبدیل کررہاہے ، ایسے میں دفعہ 144 کا نفاذ کرکے

جلسے جلوسوں پر بھی پابندی لگائی جائے ۔کیونکہ جلسے جلوسوں میں کورونا وائرس کے پھیلنے کا سب سے زیادہ چانس ہوتا ہے ، انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں کورونا وائرس میں ایک سو نو جینیاتی تبدیلیاں آئی ہیں، خطرہ بڑھ چکا ہے ۔ اموات میں بھی اضافے کا خدشہ ہے ، ڈاکٹر عطاالرحمان نے مزید کہا کہ برطانیہ میں کورونا کی نئی

قسم آنے پر پورا یورپ لاک ڈاؤن کی طرف جارہاہے ۔پاکستان کوبھی اپنا فلائیٹ آپریشن بند کردینا چاہیے تاکہ وائرس کو ملک میں داخل ہونے سے روکا جاسکے ۔دوسری جانب ٹویٹر پر وفاقی وزیرتعلیم شفقت محمود نے تعلیمی اداروں کی بندش پر کہا کہ بطور وفاقی وزیرتعلیم میں چاہتاہوں کہ تعلیمی ادارے کھول دیے جائیں ، جونہی جونہی کورونا کے حوالے سے صحت کی صورتحال بہتر ہوتی ہے بچوں کے لیے تعلیمی اداروں کے دروازے کھول دیے جائیں گے ۔ ان کا کہناتھاکہ مجھے بچوں کے تعلیمی نقصان کا دکھ ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کورونا کے باعث سب سے زیادہ نقصان تعلیمی اداروں کے پرائمری سکول کے بچوں کا ہوا ہے ۔ لیکن ان کا کہناتھاکہ جیسے ہی کورونا کی صورتحال بہتر ہوتی ہے وہ بچوں کو تعلیمی اداروں میں بلوا لیں گے ۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎