Android AppiOS App

عمران خان کا بنی گالہ میں واقع گھر کیسا ہے اس میں کیا کچھ ہے، حیران کردینے والی رپورٹ

  پیر‬‮ 28 دسمبر‬‮ 2020  |  13:55

وزیر اعظم عمران خان کا اسلام آباد کے علاقے بنی گالہ میں بنا گھر محلوں جیساعالی شان ہے اور اس گھر کو دور سے دیکھ کر لگتا ہے کہ میں کوئی ایسا شہزادہ یا بادشاہ ہی راج کرسکتا ہے۔جو لاکھوں میں ایک ہو۔بنی گالہ میں بنے اس محل نما گھر میں کیا کچھ ہے۔ اور اندر سے یہ گھر دیکھنے میں کیسا لگتا ہے ۔ یہی اس رپورٹ میں بتایا جارہاہے۔حال ہی میں یہ انکشاف ہوا ہےکہ وزیراعظم عمران خان نے سی ڈے اے کو 12لاکھ

روپےکی رقم ادا کرکے بنی گالہ میں واقع اپنے گھر کو قانونی حیثیت دلوا دی ہے۔تو آگے بڑھتے ہیں اور بات کرتے ہیں اس گھر کے ڈیزائن اوراس میں موجود شاہانہ تعمیرات کی۔یہ ہے اس گھر کا ایک فضائی منظر۔ جہاںسے

خوبصورت درختوں کے جھنڈ میں گھرے ہوئے محل کو دیکھا جا سکتا ہے جس میں ایک وسیع و عریض سرسبزو شاداب لان ، ایک خوبصورت سوئمنگ پول اور کہ محل کی ایک جانب ایک گارڈن دیکھا جا سکتا ہے۔جبکہ محل کی جانب جوگنگ کےلئے ایک پختہ ٹریک بھی موجود ہے۔محل کی بالائی منزل پر لگائی گئی بالکونی کچھ اس طرح تعمیر کی گئی ہے کہ اس سے گھر کی چاروں اطراف کےمناظر واضح طور پر دیکھے جاسکتے ہیں۔ یوں تو اس گھر میں بنائی گئی ہر چیز اتنی بیش قیمت ہے کہ کوئی عام آدمی اس کو خریدنے کا سوچ بھی نہیں سکتا، لیکن ان کے علاوہ بھی اس گھر کا طرز تعمیر ایسا ہے کہ اس گھر میں سردیوں ، گرمیوں ، اور بہار کے موسموں میں بیٹھنے کےلئے مخصوص جگہیں بنائی گئی ہیں۔مثلاً گرمیوں میں سایہ دار اور ہوادار جگہ۔ سردیوں میں دھوپ میں بیٹھنے کا انتظام اور بہار میں بیٹھنے کےلئے ایک ایسی

جگہ جہاں سے خوبصورت پھولوں اور پیڑ پودوں کے مناظر سامنے دیکھےجاسکتے ہیں۔عمران خان نے اپنے گھر میں ایک ٹینس کورٹ بنو ا رکھا ہے۔ ایک سپورٹس مین ہونےکی حیثیت سے عمران خان کے اپنے گھر میں ٹینس کورٹ بنوانے کا مقصد یقینی طور پر اس کھیل کے ذریعے اپنی فٹنس کے اعلیٰ معیار کو برقرار رکھنا ہی ہوسکتاہے۔اسی طرح گھر میں بنوائے گئے سوئمنگ پول کی موجودگی سے اندازہ ہوتا ہے کہ تیراکی کا شوق پورا کرنے کےلئے عمران خان کو کہیں دور دراز اور صاف ستھری جگہ جا کر سوئمنگ کی ضرورت پیش نہیں آتی ہوگی۔اس سوئمنگ پول کے علاوہ ایک ہال نما کمرے میں یک جھرنا نظر آتا ہے جس

سے فوارے پھوٹتے ہیں۔ اس میں دکھائی دینے والا نیلے رنگ کا صاف شفاف پانی دیکھنے والوں کی آنکھوں کو حیران کردیتا ہے۔ اس پانی کے منظر کو دیکھنے کےلئے جھرنے سے کے ساتھ بیٹھنے کےلئے صوفے رکھے گئے ہیں۔۔اس محل کی بالائی جانب جانے کےلئے اندرونی راستہ تو ہے ہی۔ باہر سے سیدھا اوپر جانے یا نیچے اترنے کےلئے اس کے اطرا ف میں سیڑھیاں بھی لگی ہوئی ہیں۔اب بات کرتے ہیں اس گھر کے اندرونی مناظر کی۔ یعنی گھر کے اندر قائم کی گئی تعمیرات کی۔مرکزی دروازے سے داخل ہوتے ہی

آپ ایک ہال نما کمرے میں پہنچ جاتے ہیں اور سامنے دو طرف سے اوپر جاتی سیڑھیوں کا ایک شاندار منظر دکھائی دیتا ہے۔جبکہ اندر داخل ہونے والوں کو ان سیڑھیوں کے عین درمیان میں خالی جگہ سے ٹی وی لائونج نظر آتا ہے۔اس ٹی وی لائونج میں انتہائی دیدہ زیب ڈیزائن کے صوفے رکھے گئے ہیں۔ جب اس ٹی وی لائونج کی دیواروں میں لگائی گئی شیشے کی کھڑکیوں سے باہر سوئمنگ پول کا منظر نظر آتا ہے۔اس ٹی وی لائونج کےساتھ کچھ بیڈ رومز ہیں۔ ہر بیڈ روم میں جدید طرز کے بیڈ، جبکہ دیواروں پر انتہائی نفیس اور دلکش ڈیزائن کے کرٹین لگے دکھائی دیں گے۔ اسی طرح بیڈ رومز کی دیواروں پر نایاب اور منفرد قسم کے پورٹریٹ آویزاں ہیں۔اسی طرح بیڈرومز کی تعمیر اس طرح سے کی گئی ہے کہ ضرورت پڑنے پر شیشے کی خوبصورت کھڑکیوں سے روشنی اور ہو ا دونوں کا بندو بست کیا جا سکتا ہے۔ اس محل نما گھر میں بنائے گئے واش رومز بھی کسی شاہی دور کے فن تعمیر کی بھرپور عکاسی کرتے ہیں۔ انتہائی مہنگے قسم کے ماربل، بے حد خوبصورت روشنیوں اور آنکھوں کو حیران کردینے والے واش روم کے سامان سے اس گھر کے مالک کےخوش ذوق ہونے کا پتہ چلتا ہے۔ ٹوائلٹ سے ملحقہ واش روم میں ایک شاندار باتھ ٹب ہے۔ جبکہ اس کے ساتھ ایک لیٹ جانے کےلئے ایک صوفہ بھی ہے۔عمران خان کے گھر میں ایک منی سیمنا بھی ہے۔جس میںکئی لوگوں کے بیک وقت بیٹھنے اور فلم دیکھنے کا انتظام کی گیاہے۔ناشتے کےلئے ایک ایسے کونے میں ٹیبل لگائی گئی ہے جس سے صبح سویرے باہر کا منظر دیکھ کر ہی انسان

اپنے دن کی شروعات ایک خوشگوار سوچ اور خوبصورت خیالات کے ساتھ کر سکتا

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎