Android AppiOS App

پنجاب میں سکولز کب بند ہونے کاامکان ہے؟ تاریخ سامنے آگئی

  ہفتہ‬‮ 21 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  23:57

پنجاب میں کورونا وبا کی دوسری لہر کے پیشِ نظر 23 نومبر کے بعد سے تعلیمی ادارے بند کرنے کی تجویز سامنے آگئی۔ وزیر قانون راجا بشارت کی زیرِصدارت کابینہ کمیٹی برائے انسداد کورونا کا اجلاس ہوا جس میں گرما گرم بحث دیکھنے میں آئی۔ و وزیر صحت نے 23 نومبر کے بعد تعلیمی ادارےبند کرنے کی تجویز دی جبکہ

وزیر تعلیم نے صرف ہائی رسک تعلیمی ادارے بند کرنے کی تجویز دی۔ وزیر تعلیم مرادراس نے کہا کہ پرائیویٹ اسکول کورونا کیسز پر درست معلومات فراہم نہیں کر رہے، اسکول بند کرنے کا فائدہ تب ہوگا جب تفریحی مقامات ،مارکیٹیں بند ہوں۔ ڈاکٹر مراد راس نے غیرضروری طور پر بچوں سے گھر سے باہر نکلنے پر بھی پابندی عائد کرنے کی تجویز دی۔ انکا کہنا تھا

کہ سکول بند کرنے ہیں تو پھر کوئی بچہ شاپنگ مال یا پارک میں نہ جائے۔ ایسا نہ ہو کہ سکول بند کردئیے جائیں اور بچے سیروتفریح کیلئے نکل جائیں۔ شرکاء کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ کورونا کے نئے کیسز اور اموات کی شرح بتدریج بڑھ رہی ہے،پنجاب میں اس وقت نئے کیسز کی شرح جون والی شرح کے برابر ہے۔ کمیٹی کے سربراہ وزیر قانون راجا بشارت نے کہا کہ شادی ہالز سے متعلق ہدایات پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے۔ کورونا وبا کی دوسری لہر کے پیشِ نظر وزارت تعلیم نے ملک بھر کے تعلیمی اداروں کیلئے تجاویز صوبوں کو بھجوائی ہیں۔ تجاویز میں کہا گیا ہے کہ تعلیمی اداروں کو 24نومبر سے31جنوری تک بندکردیاجائے، پہلے مرحلے میں 24نومبر سے پرائمری اسکولزبندکردئیے جائیں جب کہ 2دسمبر سے مڈل اسکولزبھی بند کیے جائیں۔ اسی طرح 15دسمبرسےسکینڈری اسکولزمیں بچوں کوآنےسےروکاجائے۔ وزارت تعلیم کےحکام اساتذہ کوتعلیمی اداروں میں بلانےپربضد ہیں، تجویز میں کہا گیا ہے کہ اساتذہ کوبلایا جائے اور آن لائن ایجوکیشن کےلیےتیاری کی جائے،ٹیلی اسکول،ٹیلی ریڈیوسمیت آن لائن ایجوکیشن سسٹم کو لاگو کیاجائے

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎