Android AppiOS App

تم اپنی دوکان کا نام کراچی سویٹس سے تبدیل کردو ہندو انتہا پسند پاکستان دشمنی میں پاگل پن پر اترآیا، ویڈیو وائرل

  جمعہ‬‮ 20 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  23:28

ہندو انتہا پسند تنظیم شیوسینا پاکستان دشمنی کا پرچارکرتے کرتے اخلاقیات اور اوربھونڈے پن کے پس ترین درجے پر آن گری۔ شیوسینا کے ایک رہنما نے ممبئی کے علاقے باندرا کے ایک دوکاندار کو اپنی دوکان کراچی سویٹس کا نام تبدیل کرنے کا حکم دے ڈالا۔ ایک بھارتی ویب سائٹ نے اپنی رپورٹ میں شیوسینا ورکر نیتن مادھوکر

نندگائونکر کی ویڈیو شئیر کی ہے جو باندرا ویسٹ کے ایک حلوائی کی دوکان پر کھڑا ایک دوکاندار پر دبائو ڈال رہا ہے کہ و ہ اپنی دوکان کانام کراچی سویٹس سے تبدیل کرے۔ اور میراٹھی زبان کا کوئی نام رکھ دے کیونکہ کراچی کا تعلق پاکستان سے ہے۔ جو بھارت میں دہشتگردی پھیلانے والوںکی پناہ گاہ ہے۔ حلوائی اس ہندو انتہا پسند کو بہتیری وضاحتیں دیتا ہے کہ

اس کی دوکان کا نام کراچی سویٹس اس لئے ہے کہ اس کے بڑے کراچی سے تھے لیکن تقسیم کے وقت اس کا خاندان ممبئی آکر آباد ہو گیا تھا۔ اور اب اس کا یا اس کی دوکان کا کراچی سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ تاہم نام کی تبدیلی کی وجہ سے اس کا کاروبار متاثر ہوسکتا ہے۔ تاہم شیوسینا رہنما بضد رہا کہ کچھ بھی ہو، اسے اپنی دوکان کا نام بدلنا ہی پڑے گا۔کیونکہ ہندوستا ن میں ایسی کسی بھی چیز کی کوئی بھی جگہ نہیں جس کا کوئی بھی تعلق پاکستان سے ہو۔بھلے وہ نام ہی کیوں نہ ہو۔شیوسینا رہنما نے دھمکی آمیز لہجے میں دوکاندار کو بتایا کہ وہ 15دنوں کے بعد دوبارہ آکر دیکھے گا کہ دوکان کا نام تبدیل ہوا یا نہیں۔سوشل میڈیا پرخود بھارتی صارفین نے بھی اس اقدام کو آر ایس ایس اور اس کی اتحادی جماعتوں کی گندی سیاست اور عوام کے اصل مسائل سے توجہ ہٹانےکی ایک بھونڈی کوشش قرار دے دیاہے۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎