Android AppiOS App

ہم نے دیکھا کہ آدھی رات کو موٹروے پر گاڑی کھڑی ہوئی ہے ہم نے شیشہ بجایا لیکن خاتون نے دروازہ نہیں کھولا جس کے بعد ہم نے،،،موٹروے واقعے کے ملزم عابد ملہی کے نئے انکشافات

  بدھ‬‮ 18 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  22:53

انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے لاہور سیالکوٹ موٹروے آبرو ریزی کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا ۔انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے کیس کی سماعت کی، پولیس کی جانب سے ملزم کا پندرہ روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر انتہائی سخت سکیورٹی

میں عدالت پیشی پر لایا گیا۔ دوران سماعت پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ ملزم عابد ملہی کا پولی گرافک ٹیسٹ کیا گیا ہے۔ملزم کا دوبارہ ڈی این اے ٹیسٹ بھی کیا گیا اور اس کا بیان بھی ریکارڈ کر لیا گیا ہے لہٰذاملزم سے مزید تفتیش کی ضرورت نہیں۔بعد ازاں عدالت نے کارروائی کے بعد ملزم کو چودہ روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجواتے ہوئے حکم دیا کہ اسے

دوبارہ یکم دسمبر کو پیش کیا جائے۔‎ لاہور سیالکوٹ موٹروے کیس کے ملزم عابد ملہی نے پہلی بار میڈیا سے گفتگو کی۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کے دوران عابد ملہی کا کہنا ہے کہ وہ اس سے پہلے بھی چھوٹی موٹی وارداتیں کرتا رہتا تھا۔اور واقعے کے روز اُسے بالا مستری نے بلایا تھا۔بالا مستری نہیں آیا، میں اور شفقت کرول گاؤں سے کادریا کی طرف جا رہے تھے۔موٹروے پر کھڑی گاڑی دیکھ کر اس کے پاس گئے۔خاتون نے جب گاڑی کا دروازہ نہیں کھولا تو گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون کو باہر نکالا،پہلے 20 ہزار روپے لوٹے۔ اور پھر خاتون کو دوسری طرف لے جانے کی کوشش کی، خاتون نے بھرپور مزاحمت بھی کی۔ملزم عابد ملی نے مزید بتایا کہ واردات کے بعد میں اپنے گھر شیخوپورہ چلا گیا تھا اور شفقت کہیں اور چلا گیا تھا۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎