Android AppiOS App

اگلے سال دنیا بھر میں بدترین قحط ہونے کے حوالے سے ورلڈ فوڈپروگرام نے چونکا دینے والے انکشافات کر دیے

  بدھ‬‮ 18 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  22:31

اقوامِ متحدہ کے ذیلی ادارے ’’ورلڈ فوڈ پروگرام‘‘ کے سربراہ ڈیوڈ بیزلی نے خبردار کیا ہے کہ اگر 15 ارب ڈالر فراہم نہ کیے گئے تو 2021 میں ساری دنیا، بالخصوص غریب اور ترقی یافتہ ممالک میں بدترین قحط پھیل سکتا ہے۔ایک انٹرویومیں بیزلی نے کہا کہ اس رقم میں سے 5 ارب ڈالر قحط سالی سے مقابلہ کرنے کیلئے

جبکہ مزید 10 ارب ڈالر ان بچوں کیلئے درکار ہیں جو غذائی قلت کا شکار ہیں،اگر یہ رقم نہ ملی تو ’’2021 میں ساری دنیا کو ایسے بھیانک اور ہلاکت خیز قحط کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جس کے بارے میں ہم نے صرف کہانیوں میں ہی پڑھا اور سنا ہے،‘‘ ۔بیزلی کا کہنا تھا کہ ماضی میں عالمی رہنماؤں کی جانب سے فراخدلانہ مالی امداد

کے باعث ان کا ادارہ (ورلڈ فوڈ پروگرام) مختلف ممالک میں غذائی قلت اور قحط کے خلاف جنگ میں کامیاب رہا ہے لیکن خدشہ ہے کہ آئندہ سال کیلئے مطلوبہ رقم دستیاب نہ ہوسکے؛ جس کی ایک وجہ کووِڈ 19 کی حالیہ عالمی وبا بھی ہوگی البتہ اس کمی میں دیگر عوامل بھی اپنا کردار ادا کریں گے۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎