Android AppiOS App

عمران خان سے حکومت نہیں چلتی توہٹ جائے ہم چلاکردکھائیں گے اہم ترین سیاسی شخصیت کاایسابیان جس سے کھلاڑی غصے سے پاگل ہوگئے

  پیر‬‮ 26 اکتوبر‬‮ 2020  |  14:18

سکھر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ ڈھائی سال سے نقلی وزیر اعظم تھا جس کو ہم نے دیکھا اب اصلی کو بھی دیکھ لیں گے۔مراد علی شاہ نے کہا کہ ن لیگ کے ساتھ ایک حادثہ ہوا ہے جس پر ان کا حق ہے کہ وہ جس سے چاہیں انکوائری کرائیں کراچی واقعہ کے حوالے سے

ہمارے پاس تمام ثبوت موجود ہیں، ہم کسی طرح بھی آئین کی پامالی نہیں ہونے دیں گے۔مراد علی شاہ نے یہ بھی کہا کہ اگر ان سے وفاقی حکومت نہیں چلتی تو ہٹ جائیں ہم چلا کر دکھائیں گے، اس وقت 3 صوبوں کو اسلام آباد سے چلایا جا رہا ہے، پی ڈی ایم کے قیام سے حکومت بوکھلاہٹ کا شکار

ہے پی ڈی ایم کے قیام کا نتیجہ حکومت کو اسی سال ملے گا۔انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا وزیر اعظم فیصلہ کریں کہ وہ کب لندن جا رہے ہیں لیکن اس سے قبل ان کو قرنطینہ کرنا پڑے گا، ہر بات پر گالی دینا حکومت کا فرض اور ہر الزام پچھلی حکومتوں پر ڈالنا ان کا کام ہے۔وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ گندم کی قلت ہو یا آٹا مہنگا ہوجائے تو الزام سندھ

حکومت پر دیتے ہیں ٹیکس ریونیو جمع کرنے میں وہ خود ناکام ہوئے ہیں ان کی وجہ سے مہنگائی نے غریب عوام کا جینا حرام کررکھا ہے لیکن وہ الزام ہم پر دیتے ہیں۔مراد علی شاہ نے حکومت کو للکارتے ہوئے کہا کہ اگر ان سے کام نہیں ہوتا تو ہٹ جائیں پیپلز پارٹی ملک کو ان بحرانوں سے نکالے گی، کراچی کے جلسے میں عوام نے تاریخی شرکت کی جس پر ہم عوام کے شکر گزار ہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ حکومت کی جزائر کے حوالے سے بدنیتی اس سے ظاہر ہوتی ہے کہ کس طرح ایک پبلک ڈاکیومنٹ کو ایک ماہ تک چھپا کر رکھا گیا۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎