Android AppiOS App

پاکستان میں ایک بار پھر لاک ڈائون کا اشارہ دے دیا گیا

  منگل‬‮ 20 اکتوبر‬‮ 2020  |  13:38

وفاقی وزیر اسد عمر نے ایک بار پھر لاک ڈاؤن کا اشارہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا ایس اوپیز پر غیر ذمہ داری کےنتائج آناشروع ہوگئے ہیں ، اگر یہ رویہ نہ بدلا تو قیمتی جانوں کے ساتھ روزگار بھی کھودیں گے۔تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اسد عمر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کورونا صورتحال کے حوالے سے

کہا کہ گزشتہ ہفتےکوروناسےیومیہ اموات اوسطاً12تھیں، گزشتہ چند ہفتوں کےمقابلےمیں اموات میں یہ 140فیصداضافہ ہے، ہم اجتماعی طورپرایس اوپیزکونظراندازکرکےفاش غلطی کررہےہیں۔اسدعمر کا کہنا تھا کہ کوروناایس اوپیزپرغیرذمہ داری کےنتائج آناشروع ہوگئےہیں، عوام کو سوچنا ہو گا کہ پہلے ہی ہم لوگ کرانا وبا وائرس کی وجہ سے بہت نقصان اٹھا چکے ہیں اگر ہم لوگوں نے اب بھی اسے زیادہ سیریس نہ لیا تو بہت

برے نتائج بھگتنا پڑیں گے۔ ،اگرہم نےموجودہ رویہ نہ بدلاتوجانوں کےساتھ روزگاربھی کھودیں گے ہفتے وفاقی وزیر اسد عمر نے کہا تھا کہ مظفرآباد میں کورونا وائرس سب سےزیادہ ہے اور کراچی میں بھی کوروناوائرس بڑھا ہواہے جبکہ اسلام آباداورلاہورمیں کورونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے، وقت آگیا ہے ہمیں کوروناایس اوپیز کو

سنجیدگی سے لینا ہوگا، بدقسمتی سے سخت ایکشن لینا ہوں گے ، جو معمولات زندگی متاثر کرسکتے ہیں۔ لوگوں کو اب تیار رہنا پڑے گا اب بہت سخت قسم کے اقدامات اٹھانے پڑ یں گے،لوگوں کو یہ سمجھنا یہو گا کہ جب تک وہ خود اس معاملے کو سنجیدہ نہیں لیں گے حکومت کا ساتھ نہیں دیں گے کرونا وباکو شکست دینا مشکل ہو جائے گا۔خیال رہے ملک بھر میں چوبیس گھنٹے کے دوران کورونا وائرس کے مزید 14 مریض انتقال کرگئے، جس کے بعد کورونا سے اب تک اموات کی کل تعداد چھ ہزارچھ سوتہترہوگئی جبکہ چھ سوپچیس افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی۔ این سی او سی کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ملک میں کورونا وائرس کے فعال کیسز کی تعداد نو ہزارچارسواکسٹھ ہے۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎