Android AppiOS App

کچھ عرصہ قبل استنبول کے ہوٹل میں رات 11 بج کر 20 منٹ پر نواز شریف کس سے ملاقات کررہے تھے ؟ شبلی فراز کا ملکی سیاست میں ہلچل مچا دینے والا انکشاف

  پیر‬‮ 19 اکتوبر‬‮ 2020  |  15:44

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف پر سخت تنقید کرتے ہوئے دبنگ انداز میں کہا کہ ʼلڑائی کا اعلان ہوچکا ہے اور نواز شریف کیساتھ وہی ہوگا جو الطاف حسین کے ساتھ ہوا، ن لیگ پر فوری پابندی لگائی جائے۔نواز شریف کا سیاسی جنازہ ہی پاکستان آئیگا انکی سیاست نہیں آئیگی،

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے واضح کیا کہ اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کو برداشت نہیں کیا جائیگا۔اپوزیشن کا شو فلاپ ہوگیا، جبکہ وفاقی وزیر سائنس فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ عدلیہ اور فوج کو نشانہ بنانا ریاست پر اٹیک ہے، نواز شریف خطرناک بیانیے پر کام کررہے ہیں ، یہ بیانیہ ناکام ہوگا،مولانا فضل الرحمٰن نے خالی کرسیوں سے خطاب کیا ۔ لاہور

میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید نواز شریف ایک اشتہاری مجرم ہے، بھارت میں الطاف حسین کو اتنی کوریج نہیں مل رہی جتنی گزشتہ روز نواز شریف کو ملی ہے، الطاف حسین نمبر دو کا نام نواز شریف ہے۔انہوں مزید کہا کہ ʼشہباز شریف میری پارٹی کا بندہ ہے وہ بہتر کھیل رہا ہے مگر یہ لوگ اسکی جڑوں میں بیٹھ گئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ʼنواز شریف صاحب بھگوڑے ہیں، انہیں معلوم ہی نہیں کہ وہ وہی کھیل کھیل رہے ہیں جو بین الاقوامی ایجنڈا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ʼنوٹی فکیشن جاری ہونا چاہیے کہ نواز شریف کی پارٹی ملک دشمن پارٹی ہے اور اس پر پابندی لگائی جاتی ہے، یہ پڑوسی ملک سے

پیسے لے کر ملک میں انتشار پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ʼمریم نواز کو اگر باہر نہ بھیجنا ہوتا تو یہ ٹولہ کبھی اکٹھا نہیں ہوتا۔انہوں نے مسلم لیگ (ن) کے قائد کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ʼنواز شریف صاحب استنبول کے ہوٹل میں 11 بجکر 20 منٹ پر ہونے والی ملاقات سے میں واقف ہوں اور میں نے خود خاموشی اختیار کر رکھی ہے۔وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ عوام اپوزیشن کے ذاتی مفادات کی سیاست کو جانتے ہیں، اپوزیشن کا پہلا شو فلاپ ہوگیا، ان کے پاس کوئی پروگرام نہیں۔انھوں نے عوام کیلئے کچھ نہیں کیا، مریم نواز بتائیں انہوں نے کسی غریب سے آخری ملاقات کب کی؟سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ گزشتہ روز اپوزیشن کے جلسے میں اداروں کے خلاف گھٹیا زبان استعمال کی، ملکی تحفظ کے ضامن اداروں کے خلاف مہم جوئی کی

اجازت نہیں دی جاسکتی، اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کو برداشت نہیں کیا جائیگا۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎