Android AppiOS App

روک سکو تو روک لو۔۔!! نواز شریف کو چوتھی مرتبہ وزیر اعظم پاکستان بنانے کی تیاری، دوٹوک اعلان ہوگیا

  جمعرات‬‮ 1 اکتوبر‬‮ 2020  |  21:46

مسلم لیگ ن کی مرکزی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ مشکلات کا سفر پہلی مرتبہ طے نہیں کررہے، پہلے بھی ایسا وقت دیکھا ہے، نواز شریف چوتھی مرتبہ بھی وزیراعظم بنیں گے۔اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ ن ایک

صوبے کی نہیں پورے ملک کی جماعت ہے، نواز شریف نے جو باتیں کی اس کا جواب دیں، باتیں گھمائیں پھرائیں نہیں، نواز شریف کے سوالات کے جوابات دیں۔مریم نواز نے کہا کہ حکومت کو ہٹانے کے لیے ہم سب مل کر لڑیں گے، ہم سیاسی حلیف ہیں، ایک دوسرے سے لڑیں گے لیکن لائن کراس نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ یہ راستہ پھولوں کی سیج

نہیں ہے، جب یہ راستہ چنا تو معلوم تھا یہ راستہ مشکل ہے، گرفتاری کا خوف نہیں مجھے پہلے بھی گرفتار کیا جاچکا ہے۔مسلم لیگ ن کی رہنما نے کہا کہ نواز شریف کا موازنہ کسی سے نہیں کیا جاسکتا، وہ تین مرتبہ وزیراعظم بنے چوتھی مرتبہ بھی بنیں گے۔دوسری جانب مسلم لیگ ن کے قائد سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ کو لانے والے بتائیں، اس سوغات کو کیوں مسلط کیا، مجھے اب چپ کروانے کی کوشش نہ کی جائے، پاکستان کے حالات دیکھ کر میں چپ نہیں رہ سکتا، غریبوں سے پوچھیں، وہ آٹا خریدیں یا بچوں کی فیس، ادویات، بجلی گیس کا بل دیں، پہلے بھی کہا ہمارا مقابلہ عمران خان سے نہیں ہے، ملک بچانے کیلئے نکلا ہوں، ہر پاکستانی کو کردار ادا کرنا ہوگا۔انہوں نے پارٹی کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے زمانے میں ڈالر 100روپے تک تھا، ہم سے پہلے زیادہ تھا، میری روز اسحاق ڈار سے بات ہوتی تھی کہ روپیہ گرنے نہیں دینا، ہم نے روپے کو چار سال کنٹرول میں رکھا، زرعی اجناس کو بھی نہیں بڑھنے دیا، ہم آئے تو چینی 50 روپے تھی ہم گئے تو 50

روپے تھی، پوچھو سلیکٹڈ وزیراعظم سے چینی کیوں مہنگی ہوئی؟ آٹا نہیں ہے لوگوں کے پاس، غریب لوگ روٹی کھائیں، یا بچوں کو سکولوں بھیجیں، ادویات لے یا گھر کا خرچہ چلائیں،ان کی زندگی اجیرن ہوگئی ہے، کیس نے سوچا کیسے وہ اپنی زندگی گزارتے ہوں گے، یہ ریاست مدینہ کی بات کرتے ہیں،ریاست مدینہ ایسی تھی، حال یہ ہے کہ لوگ گھروں میں سکون سے سو نہیں

سکتے، ملتان میں قوم کی بیٹی کے ساتھ کیا سلوک کیا گیا، چند روز پہلے موٹروے پر کیا ہوا؟ مجال دی ہمارے زرمانے میں یہ مجرم سر بھی اٹھا جاتے، یا ایسے دھندناتے پھرتے، ہم نے ہر چیز کو کنٹرول کرکے رکھا ہوا تھا، ہم نے صرف معیشت کو ہی نہیں ، دفاعی سیکٹر میں بھی اللہ کے فضل سے پاکستان کو ناقابل تسخیر بنایا۔آج چار ملک نہیں ملتے جو آپ کو مسائل پر سپورٹ کریں، 51ملکوں میں آپ کو اتنے بھی نہیں کہ آپ ایک قراردار ٹیبل نہیں کرسکے؟ کشمیر کا بیڑہ غرق کردیا،صرف یہ میں کشمیر کا سفیر، کہاں گئی تمہاری سفارتکاری ؟ آپ نے ملک ہر جگہ پر بیڑہ غرق کردیا ہے، جھوگیوں میں لوگ رہتے ان سے پوچھو؟ غریبوں سے پوچھو، عید پر لوگوں کے پاس جوتے لینے کے پیسے نہیں ، آپ کہتے ایک کروڑ نوکریاں دیں گے، یہاں ڈیڑھ کروڑ بندے بے روزگار ہوگئے ہیں، آپ کو لانے والے کہاں ہیں؟ سلیکٹڈ کو لانے والے بتائیں ہمیں اس سوغات کو کیوں ملک پر مسلط کیا؟ کیوں الیکشن چوری کیا؟ میں نے پہلے بھی کہا ہمارا مقابلہ عمران خان سے نہیں ہے۔میں نہیں چاہتا تھا کہ میں جذبات میں بولوں لیکن پاکستان کے حالات دیکھ کر میں چپ نہیں رہ سکتا، مجھے کوئی چپ کروانے کی کوشش نہ کرے؟ میں اب چپ نہیں رہ سکتا۔انہوں نے اجلاس کے دوران نعرے لگانے پر کہا کہ کیا ہم سب کو تاریخ کی درست سمت میں کھڑے ہوکر نظر آنا چاہیے، اگر میں درست بات کررہا ہوں ،تو کیا میرا ساتھ دو گے؟ اجلاس میں نعرے لگائے گئے قدم بڑھاؤ نوازشریف ہم تمہارے ساتھ ہیں۔اگر آپ ساتھ دو گے تو میں آپ کا ساتھ نہیں چھوڑوں گا، مجھے آپ اپنے نظریے پرقایم دائم پائیں گے۔ میں ملک بچانے کیلئے نکلا ہوں، ہر پاکستان کو کردار ادا کرنا ہوگا، ارکان اسمبلی پر زیادہ ذمہ داری ہے کیوں کہ آپ منتخب نمائندے ہیں، میں آپ لوگوں سے وعدہ کرلیا، کل کو قوم آپ سے وعدہ کرے گی۔ قوم ہمارے کندھے سے کندھا ملا کر چلے گی، اللہ کی تائید بھی ہمارے ساتھ ہوگی۔

انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎