Android AppiOS App

اسلام میں اسقاط حمل غلط ہے توکیاکنڈوم کااستعمال جائزہے یانہیں

  منگل‬‮ 11 جون‬‮ 2019  |  12:51

معروف مذہبی سکالرڈاکٹرذاکرنائیک سے ایک شخص نے سوال کیاکہ اسلام میں اسقاط حمل غلط ہے توکیاکنڈوم کااستعمال جائزہے یانہیں ۔اس سوا ل کاجواب دیتے ہوئے ڈاکٹرزاکرنائیک نے کہاکہ اپنے گناہ کوچھپانے کے لیے ابارشن (بچہ گرانا)کرناغلط ہے لیکن اگروالدہ کی جان خطرے میں ہے اورڈاکٹرکہتے ہیں کہ اگرہم ابارشن نہیں کریں گے تووالدہ کی جان جاسکتی ہے تواس وقت ابارشن کرنے کی اجازت ہے کیونکہ

اسلام میںچھوٹے نقصان کی اجازت ہے بڑے نقصان کوروکنے کے لیے ۔چھوٹانقصان ہے کہ بچے کی جان جارہی ہے اوربڑانقصان یہ ہے والدہ کی جان جارہی ہے۔اگروالدہ کی جان خطرے میں ہے تواس وقت بچہ ضائع کرنے کے لیے والدہ کے آپریشن کی اجازت ہے۔جہاں تک پروٹیکشن لینے کاسوال ہے تواس کے اندردورائے ہیںکچھ علماکہتے ہیں کہ بچہ پیدانہ کرنے کے لیے

جومستقل طریقے اختیارکیے جاتے ہیں وہ غلط ہیں۔اختلاف ہے عارضی طریقے پرچاہیے کنڈوم ہو۔جب آپ عارضی طریقہ اختیارکرتے ہوتویہ بھی میرے نزدیک ایک ابارشن ہے۔میں یہ کہتاہوں کہ جب اللہ تعالیٰ رزق دینے والاہے تو

میرے نزدیک اگرماں کی زندگی خطرے میں ہےاس کودل کامسئلہ ہے اوراگرایک اوربچہ ہونے سے ا سکی جان جاسکتی ہےیابچے کی پیدائش کے لیے چاریاپانچ دفعہ آپریشن ہوچکاہے اورایک اورآپریشن کرانے سے خطرہ ہےاورماں کی جان جاسکتی ہے تواس وقت آپ کنڈوم کااستعمال کرسکتے ہیں۔لیکن عام طورپرآدمی کی سوچ ہوتی ہے کہ کم بچے ہوں گے تومیں اچھی تعلیم دوں گاتومیں اس حوالے سے کہناچاہتاہوںکہ میں میرے والدین کاپانچواں بچہ ہوں اگرمیرے والدین فیملی پلاننگ کرتے تومیں سٹیج پرموجودنہ ہوتا۔ے چینی بھی ایک بڑا روگ بن چکی ہے۔کسی کو رزق میں فراوانی کے باوجود بے چینی ہے اور تسکین قلب نہیں.کوئی بچوں کے مستقبل سے خوف کھاتا ہے اور بے چین رہتا ہے. دیکھا جائے تو بے چینی کامطلب ہے کہ انسان کو تسکین قلب میسر نہیں.

تسکین قلب ایک نعمت اور رحمت ہے لیکن جب یہ ہی انسان کو میسر نہ آئے تو ایسے جینے میں کوئی لطف نہیں رہتا.تسکین قلب کے لئے اوربے چینی کو ختم کرنے کے لئے رسالت مآب حضور اکرم ﷺ نے ایک دعا تعلیمفرمائیہے جس کے پڑھتے ہی رحمت کانزول شروع ہوجاتا ہے . یہ دعا بہت مجرب ہے جو بھی پریشانی ہو اللہ تعالیٰ پر کامل بھروسہ کے ساتھ پڑھیں ان شاءاللہ فائدہ ہوگا۔اللهم رحمتك ارجو فلا تكلني إلى نفسي طرفة عين ، وأصلح لي شأني كله ، لا إله إلا أنت دعا ایسے موقع کے لئے تیر بہدف کا کام کرتی ہے جب کوئی کام رکا ہوا ہو یا سخت سے سخت پریشانی لاحق ہو .بہتر طریقہ یہ ہے کہ دو رکعت نماز حاجت پڑھیں اور سلا م کے بعد ۱۱ بار یہی دعا پڑھیں ان شاءاللہ کام ہو جائے گا

اول و آخر درود ابراہیمی ضرور پڑھیں . نیز یہ دعا اگر کوئی ہر نماز کے بعد ایک بار پڑھیں تو اس کا کوئی کام رکا نہیں رہے گا۔استاد نے کلاس میں بچوں سے سوال کیایہ بتاؤ کہ وہ کون لوگ ہیں جو نماز ادا نہیں کرتے؟ پہلا بچہ: (معصومیت سے) جو لوگ مرچکے ہیں.دوسرا بچہ: (ندامت سے) جنکو نماز پڑھنی نہیں آتی.تیسرے بچے نے بڑا معقول جواب دیا:سر وہ لوگ جو مسلمان نہیں ہیں.چوتھے بچے نے جواب دیا جو لوگ کافر ہوتے ہیں وہ نماز نہیں پڑھتے ہیں پانچویں بچے نے کہا جو لوگ اللہ پاک سے ڈرتے نہیں ہیں وہ نماز نہیں پڑھتے بچے تو جواب دے کر فارغ ہوگئے مگر مجھے سوچنے پر لگادیا کہ:میرا شمار کن لوگوں میں ہوتا ہے؟1. کیا میں مرچکا ہوں؟2. کیا مجھےنماز نہیں آتی؟ کیا میں مسلمان نہیں ہوں؟

کیا مجھے اپنے رب کا خوف نہیں ؟؟کیا میں کافر ہوں جو اپنے رب کے سامنے سجدہ ریز نہیں ہوتا؟؟؟؟حضور نبی اکرم صلی الله علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ جو کوئی نماز کو حقیر جانے گا اس کو الله تعالیٰ کی طرف سے پندرہ سزائیں ملیں گی، ﭽﮭ سزائیں زندگی میں، تین مرتے وقت، تین قبر میں اور تین روز حساب میں- زندگی کی ﭽﮭ سزائیں ١)۔۔۔ الله اس کی زندگی سے رحمتیں اٹھا لے گا-(اس کی زندگی بد نصیب بنا دے گا) ٢)۔۔۔ الله اس کی دعا قبول نہیں کرے گا- ٣)۔۔۔ الله اس کے چہرے سے اچھے لوگوں کی علامات مٹا دے گا- ٤)۔۔۔ زمین پر موجود تمام مخلوقات اس سے نفرت کریں گی- تمام مخلوقات اس سے نفرت کریں گی-٥)۔۔۔ الله اسے اس کے اچھے کاموں کا صلہ نہیں دے گا-٦)۔۔۔ وہ اچھے لوگوں کی دعاؤں میں شامل نہیں ہو گا-مرتے ہوئے تین سزائیں١)۔۔۔

وہ ذلیل ہو کر مرتا ہے-٢)۔۔۔ وہ بھوکا مرتا ہے-٣ )۔۔۔ وہ پیاسا مرتا ہے- (اگرچہ وہ تمام سمندروں کا پانی پی لے، پیاسا ہی رہے گا)قبر میں تین سزائیں١)۔۔۔ الله اس کی قبر اتنی تنگ کردے گا جب تک اس کی پسلیاں ایک دوسرے کے اوپرنہ چڑھ جائیں-٢)۔۔۔ الله اسے چنگاریوں والی آگ میں انڈیل دے گا-٣)۔۔۔ الله اس پر ایسا سانپ بٹھائے گا جو ٰبہادر اور دلیرٰ کہلاتا ہے، جو اسے نماز فجر چھوڑنے پر صبح سے لے کر دوپہر تک ڈسے گا،نماز ظہر چھوڑنے پر دوپہر سے لے کر عصر تک ڈسے گا، اور اسی طرح ہر نماز چھوڑنے پر اگلی نماز تک ڈسے گا،

ہر ضرب کے ساﺘﻬ ستر گز زمین کے اندر دھنسے گا- روز حساب کی تین سزائیں١)۔۔۔ الله اسے منہ کے بل جہنم میں بھیج دے گا جو جرم میں شامل ہو گا-٢)۔۔۔ الله اسے غصے سے دیکھے گا جس سے اس کے چہرے کا ماس گر جائے گا-٣)۔۔۔ الله اس کا سخت حساب لے گا اور اسے جہنم میں پھینکنے کا حکم دے گا-جو اپنی نمازوں کو ادا نہیں کرتے۔۔۔۔۔۔فجر: ان کے چہرے کا نور ختم ہو جاتا ہے-ظہر: ان کی آمدنی سے برکت اٹھا لی جاتی ہے-عصر: ان کے جسم کی مضبوطی اٹھا لی جاتی ہے-مغرب: انہیں اپنے بچوں سے کوئی فائدہ نہیں پہنچتا-عشاء: ان کی نیند سے سکون ختم ہو جاتا ہے