بدعات کے باعث جبل نور کی زیارت عمرہ وحج پیکج سے نکالنے کا حکم جاری

  جمعہ‬‮ 25 مئی‬‮‬‮ 2018  |  14:56

سعودی عرب کی وزارت حج وعمرہ نے مملکت میں عمرہ اداروں وکمپنیوں کو ہدایت کی ہے کہ کوئی بھی عمرہ کمپنی جبل نور کی زیارت کو اپنے ٹریول پیکیج میں شامل نہ کرے۔ وزارت حج نے تمام عمرہ کمپنیوں واداروں سے کہا ہے کہ وہ اس ہدایت کی وصولی سے آگاہ کرنے کا بھی اہتمام اور اس پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں۔ مکہ مکرمہ گورنریٹ نےوزارت حج وعمرہ کو تحریر کردہ مکتوب میں اطلاع دی تھی کہ وزارت اسلامی امور، دعوت ورہنمائی نے جبل نور پر مشرکانہ سرگرمیوں اور بدعات وخرافات پر مبنی سرگرمیوںکی بہتات سے

right;">متعلق خبروں کا نوٹس لیتے ہوئے ایک تحقیقاتی کمیٹی قائم کی تھی۔ کمیٹی نے سفارش کی کہ معلمین اور سیاحتی کمپنیوں کے مالکان سے یہ اقرار نامے لئے جائیں کہ ان میں سے کوئی بھی جبل نور کی زیارت کو عمرہ یا حج پیکیج کا حصہ نہ بنائے۔

کمیٹی کے ارکان نے اپنی سفارش کا جواز یہ کہہ کر پیش کیا کہ جبل نور پر ان دنوں جو کچھ ہونے لگا ہے وہ شرعاً جائز نہیں ہے۔ وہاں زیارت کے لئے آنے والے لوگ اسلامی شریعت کے مقررہ قواعد وضوابط کی خلاف ورزیاں کر رہے ہیں۔ سفارش کا ایک جواز یہ بھی دیا گیا ہے کہ جبل نور جانے والے زائرین میں سے بعض پہاڑ سے گر جانے کے باعث جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں، لہذا زائرین کو نقصان سے بچانے کیلئے بھی پابندی ناگزیر ہو گئی تھی۔ وزارت حج وعمرہ کی جانب سے عمرہ کمپنیوں و اداروں کو جاری کئے جانے والے خط میں یہ انتباہ بھی دیا گیا ہے کہ اگر آئندہ زائرین کو جبل نور لے جایا گیا تو عمرہ کمپنیوں و اداروں سے اس کیلئے باز پرس ہو گی اور انہیں مقررہ پابندیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ وزارت حج نے عمرہ کمپنیوں واداروں کے مالکان ومنتظمین سے یہ بھی کہا ہے کہ وہ یہ خط ملنے کے تین روز کے اندر ادارہ معتمرین کے ڈائریکٹر جنرل کو ہدایت کی وصولی سے ہر حال میں مطلع کریں۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎