میاں بیوی کی لڑائی

  پیر‬‮ 19 فروری‬‮ 2018  |  12:37

ایک شخص نےپہلی بار بیوی پر ہاتھ اٹھایا جس سے بچے خوف زدہ ہوکر رونے لگے۔ بچوں کا حال دیکھ کر بیوی رنجیدہ ہوکر روتے ہوئے کہنے لگی میں بچوں کی وجہ سے رورہی ہوں میں تیری شکایت کروں گی..تیرا یہ خیال ہے کہ تم دروازے کھڑکیاں بند کرکے مجھے روک لو گے تو یہ ممکن نہیں ہے . یہ کہہ کر بیوی حمام کی طرف چل پڑی شوہر نے سمجھا شاید یہ حمام کی کھڑکی سے نکلنے کی حماقت کرے ، اس لیے شوہر کھڑکی کے پاس گیا . مطمئن ہونے کے بعد وہ اندر آیا اور

اس کے حمام سے باہر نکلنے کا انتظار کرنے لگا۔

جب وہ حمام سے باہر نکلی تو چہرہ وضو کے پانی سے ترتھا۔ بیوی نے کہا: میں تیری اس سے شکایت کروں گی جس کے نام کی تو قسم اٹھاتا ہے اس سے مجھے تیری بند کھڑکیاں بند دروازے سمیت کوئی بھی چیز نہیں روک سکتی، اور اس کے دروازے کبھی بند نہیں ہوتے ہیں۔ شوہر نے اپنا رخ بدلا اور کرسی پر بیٹھ کر خاموشی کے ساتھ گہری سوچ میں ڈوب گیا۔ اندر جاکر بیوی نے نماز اداکی اور خوب لمبا سجدہ کیاشوہر یہ سب دیکھ رہا تھا۔جب وہ نماز سے فارغ ہوکر بارگاہِ ایزدی میں دعا کےلئے اپنے ہاتھوں کو اٹھانے لگی تو شوہر اس کی طرف لپکا اور ہاتھوں کو پکڑ لیا اور کہا کہ اللہ کی بندی سجدے میں کی گئیں بددعائیں کافی نہیں ہیں؟؟

بیوی نے کہا کہ تیرا کیا خیال ہے کہ میں اتنی جلدی اپنے ہاتھ نیچے کرلوں گی؟! شوہر: بخدا! ۔۔یہ سب مجھ سے غصہ میں ہوا ہے میں نے قصداً نہیں کیا ۔۔بیوی: اسی لئے میں تیرے لئے دعا پر اکتفا نہیں کرسکتی بددعائیں تو میں نے شیطان کےلئےکررہی تھی جس نے تجھے غصہ دلایا، میں اتنی احمق نہیں ہوں کہ اپنے شوہر اور شریکِ حیات کے لئے بددعا کروں۔۔۔ یہ سن کر شوہر کے آنسو بہنے لگ گئےاور کہا میں وعدہ کرتا ہوں اب کبھی آپ کو دکھ نہیں دونگا۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎