میاں بیوی کی انڈرسٹینڈنگ

  پیر‬‮ 12 فروری‬‮ 2018  |  13:36

عمر کا ایک حصہ گزار کا آج مصالحت کاراز پتا چلا، اکثر سننے میں آتا تھا کہ فلاں میاں بیوی میں بڑ ی انڈرسٹینڈنگ ہے۔ خیر ہم بھی ایک عدد بیوی رکھتے ہیں لیکن ہمیشہ شش و پنج میں ہی رہے کہ آخر یہ مصالحت یعنی انڈرسٹینڈنگ ہوتی کیسے ہے، جبکہ ہمیں تو اکثر مسائل کا ہی سامنا رہتا ہے کہ ہم کہتے ہیں بھلی بانس یہ کردو تو وہ کہتی ہیں چھوڑیں آپ کو کیا پتا یہ ایسے نہیں کرنا، اسی طرح بہت سے معاملات پر اکثر اوقات ہماری بحث ہو جاتی تھی اور ہمیں اپنی اوقات

کا ٹھیک طرح سے ادراک ہو جاتا تھا، پھر سوچا چلو گوگل کو آزما کر دیکھیں کہ شائد وہ ہی اس کا کوئی حل بتا دے

مگر افسوس گوگل بھی مات کھا گیا، پھر ایک دن خواب میں بہت بڑئے مرید کا دیدار ہوا، انہوں نے ہمیں سمجھایا کہ بیٹھ کر معاملات کو سلجھاؤ اس سے زندگی بہتر گزرے گی، لہذا اگلے دن ہم نے بیگم صاحبہ سے کہا کہ اُن سے کچھ بات کرنی ہے، تو جواب ملا جلدی بتاؤ مجھے ابھی امی کے گھر جانا ہے۔ خیر جلدی جلدی عرض کی کہ آج ہم مصالحت کر لیتے ہیں، تو بولیں جلدی بکو جو بکنا ہے، میں نے کہا کیونکہ میں ایک مرد ہوں لہذا بڑئے بڑئے فیصلے یعنی، آج کھانا کیا بنانا ہے، برتن کس صابن سے دھونے ہیں، کس دُکان سے دودھ لینا ہے، بچوں کے ڈائپر کس برانڈ کے ہوں گے، بچوں کا شیمپو کون سا ہو گا، کپڑئے کس دن دھونے ہیں وغیرہ میں کرؤں گا اور چھوٹے چھوٹے فیصلے یعنی، بچے کس سکول میں جائیں گے، کس رشتہ دار کے ہاں جانا ہے، بڑئے ہونے پر بچوں کی شادیاں کہاں کرنی ہیں، گاڑی اور گھر کون سا لینا ہے، کاروبار کون سا بہتر ہے، وغیرہ جو کے بہت چھوٹے فیصلے ہوتے ہیں وہ کریں گی تو انہوں نے میری بات فورا مان لی، تب سے ماشاء اللہ ہماری کبھی کسی بات کو لے کر بحث نہیں ہوئی اور ہم میں بھی مصالحت یعنی انڈرسٹینڈنگ ہو گئی ہے۔ تو آج سے لوگ ہماری بھی مثال دیا کریں گے کہ دیکھو میاں بیوی میں کیسی انڈرسٹینڈنگ ہے۔

ہمارئے ایک دوست ہیں جناب کے بقول اُن کی بیوی اُن کے لیے Directجنت سے بھیجی گئیں ہیں سونے پے سہاگہ موصوفہ میں صفات بھی ہوروں جیسی پائی گئیں ہے۔ وہ اتنی بھولی اور معصوم ہیں کہ ہمارئے دوست صبح دال کے پیسے دے کر جاتے ہیں اور شام کو گھر میں مٹن پکا ہوتا ہے۔ تو جناب خوش ہو جاتے ہیں کہ کیسی زوجہ ماجدہ پائی ہے کہ جس کے آنے سے معجزات ہونے شروع ہو گئے ہیں۔ صرف یہی نہیں بلکہ جب سے جناب کی شادی ہوئی ہے محلے میں موصوف کی عزت کو بھی چار چاند لگ گئے ہیں۔ وہ لوگ جو کبھی ان کی کتے جتنی عزت نہیں کرتے تھے اب ہر محفل کی یہی جان ہوتے ہیں۔ اور ہر ایک کی کوشش ہوتی ہیں کہ کسی نہ کسی طرح ان کا مخلص بن جائے۔ یہی دوست پہلے پہل پھٹی پرانی جینز پہن کر گھوما کرتے تھے آجکل ارمانی سے کم میں بات نہیں کرتے۔ ہمارئے دوست کا بھی یہی ماننا ہے کہ یہ سب کرامات ان کی بیگم کی ہیں جن کے آنے سے اُن کے دن بدل گئے ہیں۔بیوی سے انڈرسٹینڈنگ بے حد ضروری ہے اور اس کی اہمیت کو کبھی بھی پس پشت نہیں ڈالنا چاہیے بلکہ اس کو ڈویلپ کرنے کی ہر ممکن کوشش کرنی چاہیے تا کہ ہم ایک خوش و خرم زندگی بسر کر سکیں۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎