جواں مرد

  پیر‬‮ 8 جنوری‬‮ 2018  |  11:12

شیخ سعدی رحمہ اللہ نے حاتم طائی کے متعلق حکایت لکھی ہے‘کسی نے حاتم طائی سے پوچھا کہ تمھیں کبھی کوئی ایسا شخص ملا ہے جو جواں مردی میں تم سے بڑا ہو۔حاتم نے جواب دیا ہاں

! ایک دفعہ میں نے چالیس اونٹ ذبح کرائے اور منادی کروا دی کہ جس جس کا جی چاہے میرے دسترخوان پر کھانا کھائے۔منادی سن کر بے شمار لوگ آئے اور سیر ہو کر گئے‘اتفاق سے اسی دن میں کسی کام سے جنگل کی طرف گیا۔وہاں دیکھا ایک بوڑھا لکڑہارا لکڑیاں جمع کرتا پھر رہا ہے۔میں اس کے پاس گیا

اوراس سے کہا کہ بڑے میاں

 کیا تم نے سنا نہیں کہ آج حاتم کے ہاں عام دعوت ہے؟آج کے دن لکڑیاں چننے کی کیا ضرورت تھی؟حاتم کے گھر جاتے اور خوب سیر ہو کر کھانا کھا لیتے‘بوڑھے نے میری آواز سنی اور سر اٹھا کر کہا کہ بھائی! مجھے حاتم کی منادی اور دعوت کا علم ہے۔جب تک اللہ نے میرے بازو¿وں میں طاقت رکھی ہے مجھے حاتم کا احسان اٹھانے کی کیا ضرورت ہے؟یہ کہا اور پھر لکڑیاں چننے لگ گیا‘میری نظر میں وہ بوڑھا جواں مردی میں مجھ سے بڑھ کر تھا۔ میں نے اس سے بڑھ کر جواں مرد نہیں دیکھا۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎