کبھی

  بدھ‬‮ 6 دسمبر‬‮ 2017  |  10:44

تھوڑا سا وقت نکال کر اسے پڑھیں۔   بڑا مکان۔۔۔چھوٹا خاندان     چاند تک رسائی۔۔۔پڑوسیوں کی خبر نہیں       ترقی یافتہ میڈیکل سروسز۔۔۔بڑھتی بیماریاں زیادہ جابیں،  زیادہ پیسے۔۔۔کوئی دماغی سکون نہیں        زیادہ معلومات۔۔۔کوئی سمجھ بوجھ نہیں فیس بک پر کروڑوں دوست۔۔۔

حقیقت میں کوئی ساتھ دینے والا نہیں    ایک دوسرے کے بارے میں سب معلوم ہے۔۔۔لیکن کوئی احساس نہیں ہے             رشتے ہزار۔۔محبت مفقود        انسانوں کی دنیا۔۔۔انسانیت کوئی نہیں     مہنگی گھڑیاں۔۔۔بچوں کے لیے کوئی وقت نہیں   یہ کیسی زندگی ہے، ہم آگے بڑھ رہے ہیں

یا واقعی سب رشتوں کو چھوڑ کر بہت ہی آگے نکل آئے ہیں اور اب سوچتے رہتے ہیں کہ سکون کیوں نہیں ملتا۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎